جشن برباد خیالوں کا منا لوں تو چلوں

سید مبین علوی خیرآبادی

جشن برباد خیالوں کا منا لوں تو چلوں

سید مبین علوی خیرآبادی

MORE BYسید مبین علوی خیرآبادی

    جشن برباد خیالوں کا منا لوں تو چلوں

    مژۂ شوق کو غم ساز بنا لوں تو چلوں

    میری ہستی میں سمٹ آئے اندھیرے غم کے

    شمع الفت کی ترے غم میں جلا لوں تو چلوں

    دل بے تاب ٹھہر اشک تمنا کے طفیل

    بزم فرقت کو سر شام سجا لوں تو چلوں

    کیف طاری ہے بہت آج تصور میں ترے

    اب ذرا ہوش کے ماحول میں آ لوں تو چلوں

    ان کا دیدار مرے بس کا ابھی کام نہیں

    اپنی نظروں سے حجابات اٹھا لوں تو چلوں

    ابھی سیلاب پہ دریا ہے سفینہ بردوش

    میں کسی موج کی آغوش میں آ لوں تو چلوں

    جلوہ گر سامنے ہے آج مبینؔ ان کا جمال

    پیاس آنکھوں کی ذرا اور بجھا لوں تو چلوں

    مأخذ :
    • کتاب : Pirahn-e-harf (Pg. 104)
    • Author : Mubeen Alvi Khairabadi
    • مطبع : Mubeen Alvi Khairabadi (1999)
    • اشاعت : 1999

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے