Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کبھی خرد سے کبھی دل سے دوستی کر لی

زبیر رضوی

کبھی خرد سے کبھی دل سے دوستی کر لی

زبیر رضوی

MORE BYزبیر رضوی

    کبھی خرد سے کبھی دل سے دوستی کر لی

    نہ پوچھ کیسے بسر ہم نے زندگی کر لی

    اندھیری رات کا منظر بھی خوب تھا لیکن

    تم آ گئے تو چراغوں میں روشنی کر لی

    تمہارا جسم ہے جاڑوں کا سرد سناٹا

    حرارتوں سے کہاں تم نے دوستی کر لی

    حضور دوست عجب حادثہ ہوا یارو

    ہر ایک حرف شکایت نے خودکشی کر لی

    لیے پھرے ہیں بہت تم کو دل کی گلیوں میں

    اس ایک بات پہ دنیا نے دشمنی کر لی

    ہر ایک موڑ پہ خنجر بکف تھی تنہائی

    غریب شہر نے گھبرا کے خودکشی کر لی

    مأخذ:

    Funoon(Jadeed Ghazal Number: Volume-002) (Pg. 860)

      • اشاعت: 1969
      • ناشر: احمد ندیم قاسمی
      • سن اشاعت: 1969

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے