کہاں ہے ایسی زمیں جس پہ آسمان نہ ہو

ابھے کمار بیباک

کہاں ہے ایسی زمیں جس پہ آسمان نہ ہو

ابھے کمار بیباک

MORE BYابھے کمار بیباک

    کہاں ہے ایسی زمیں جس پہ آسمان نہ ہو

    وہ کیسا شہر جہاں ایک بھی مکان نہ ہو

    ہمارے دشت نے اتنا تو انتظام رکھا

    سروں پہ دھوپ رہے کوئی سائبان نہ ہو

    دل و دماغ کی الجھن میں یہ کہاں ممکن

    کہ ذہن و دل تو تھکیں روح کو تھکان نہ ہو

    خود اپنی پیٹھ تو ہم تھپتھپا نہیں سکتے

    ہمیں ہے خوف کہ بے جا کوئی گمان نہ ہو

    میں خواب دیکھ رہا ہوں اس احتیاط کے ساتھ

    عتاب صبح سے سپنا لہو لہان نہ ہو

    زمیں سے دور چلے آئے ہیں مگر ببیاکؔ

    دعا کرو کہ یہیں ختم یہ اڑان نہ ہو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY