کئی سراب ملے تشنگی کے رستے میں

مظہر امام

کئی سراب ملے تشنگی کے رستے میں

مظہر امام

MORE BYمظہر امام

    کئی سراب ملے تشنگی کے رستے میں

    رکاوٹیں ہیں بہت روشنی کے رستے میں

    ہمارا آپ کا سر پھوڑنا مقدر ہے

    صنم کھڑے ہیں ابھی آدمی کے رستے میں

    ہے اس کا ساتھ تو لب پر یہی دعا ہے کہ پھر

    نہ آئے اور کوئی زندگی کے رستے میں

    وہاں ملا بھی تو اپنا ہی آشنا سا یہ

    کھڑے تھے دیر سے ہم روشنی کے رستے میں

    نئی ہے فکر مگر لفظ تو پرانے ہیں

    قدامتیں ہیں وہیں تازگی کے رستے میں

    مآخذ:

    • کتاب : paalkii kahkashaa.n (Pg. 38)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY