کثرت وحدانیت میں حسن کی تنویر دیکھ

شیر سنگھ ناز دہلوی

کثرت وحدانیت میں حسن کی تنویر دیکھ

شیر سنگھ ناز دہلوی

MORE BYشیر سنگھ ناز دہلوی

    کثرت وحدانیت میں حسن کی تنویر دیکھ

    دیدۂ حق بیں سے رنگ عالم تصویر دیکھ

    اس قدر کھنچنا نہیں اچھا بت بے پیر دیکھ

    پیار کی نظروں سے سوئے عاشق دلگیر دیکھ

    غیر نے مجھ پر ستم ڈھائے ہیں ڈھالے آج تو

    رہ نہ جائے کوئی بھی ترکش میں باقی تیر دیکھ

    کام بن بن کر بگڑ جاتے ہیں لاکھوں رات دن

    کس قدر ہے مجھ سے برگشتہ مری تقدیر دیکھ

    پھر نہ یہ کہنا کہ خط لکھا ہے کس نے غیر کو

    لے یہ ہے موجود تیرے ہاتھ کی تحریر دیکھ

    ہارنا ہمت دلیل کامیابی سے ہے دور

    کام لے تدبیر سے پھر خوبی تقدیر دیکھ

    گنبد گردوں سنبھل اے گنبد گردوں سنبھل

    کر نہ دے صد پاش تیر آہ پر تاثیر دیکھ

    چار دن کی زندگی پر مشت خاک اتنا غرور

    پیس دے گا ایک دن یہ آسمان پیر دیکھ

    بے بلائے تو نہیں آیا تری محفل میں نازؔ

    دیکھ ہاں ہاں دیکھ اپنے ہاتھ کی تحریر دیکھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY