کون تنہائی کا احساس دلاتا ہے مجھے

نور جہاں ثروت

کون تنہائی کا احساس دلاتا ہے مجھے

نور جہاں ثروت

MORE BYنور جہاں ثروت

    کون تنہائی کا احساس دلاتا ہے مجھے

    یہ بھرا شہر بھی تنہا نظر آتا ہے مجھے

    جانے کس موڑ پہ کھو جائے اندھیرے میں کہیں

    وہ تو خود سایہ ہے جو راہ دکھاتا ہے مجھے

    اس کی پلکوں سے ڈھلک جاؤں نہ آنسو بن کر

    خواب کی طرح جو آنکھوں میں سجاتا ہے مجھے

    عکس تا عکس بدل سکتی ہوں چہرہ میں بھی

    میرا ماضی مگر آئینہ دکھاتا ہے مجھے

    وہ بھی پہچان نہ پایا مجھے اپنوں کی طرح

    پھول بھی کہتا ہے پتھر بھی بتاتا ہے مجھے

    اجنبی لگنے لگا ہے مجھے گھر کا آنگن

    کیا کوئی شہر نگاراں سے بلاتا ہے مجھے

    کسی رت میں بھی مری آس نہ ٹوٹی ثروتؔ

    ہر نیا جھونکا خلاؤں میں اڑاتا ہے مجھے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY