خالی ہاتھوں میں محبت بانٹتی رہ جاؤں گی

صائمہ اسما

خالی ہاتھوں میں محبت بانٹتی رہ جاؤں گی

صائمہ اسما

MORE BY صائمہ اسما

    خالی ہاتھوں میں محبت بانٹتی رہ جاؤں گی

    اپنے خالی ہاتھ آخر دیکھتی رہ جاؤں گی

    کوچ کر جائیں گے سب دشت وفا سے قافلے

    خواب آنکھوں میں لئے میں سوئی ہی رہ جاؤں گی

    بھول جائے گا کوئی مجھ کو بجھانے کا ہنر

    صبح بھی آئی تو شب بھر سے جلی رہ جاؤں گی

    پاؤں گی جرم محبت کی انوکھی سی سزا

    وقت کے ہونٹوں پہ میں اک ان کہی رہ جاؤں گی

    تم نے چھوڑا ہے تو رستے اور روشن ہو گئے

    تم یہ سمجھے تھے کہ رستے میں کھڑی رہ جاؤں گی

    وسعت افلاک میں بھی نسبت زہرہ کہاں

    ٹوٹ کر بھی لمحہ بھر کی روشنی رہ جاؤں گی

    آج سوچا ہے کہ خود رستے بنانا سیکھ لوں

    اس طرح تو عمر ساری سوچتی رہ جاؤں گی

    مآخذ:

    • کتاب : Gul-e-Dupahar (Pg. 53)
    • Author : Saima Asma
    • مطبع : Idarah Batool, Sayyed Palaza, Firozpur Road, Lahore (2006)
    • اشاعت : 2006

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY