کسی کا کام دل اس چرخ سے ہوا بھی ہے

تاباں عبد الحی

کسی کا کام دل اس چرخ سے ہوا بھی ہے

تاباں عبد الحی

MORE BYتاباں عبد الحی

    کسی کا کام دل اس چرخ سے ہوا بھی ہے

    کوئی زمانہ میں آرام سے رہا بھی ہے

    کسی میں مہر و محبت کہیں وفا بھی ہے

    کوئی کسی کا زمانہ میں آشنا بھی ہے

    کوئی فلک کا ستم مجھ سے بچ رہا بھی ہے

    جنا نصیب کوئی مجھ سا دوسرا بھی ہے

    برا نہ مانیو میں پوچھتا ہوں اے ظالم

    کہ بے کسوں کے ستائے سے کچھ بھلا بھی ہے

    جو پختہ مغز ہیں وے سوز دل نہیں کہتے

    کسی نے شمع سے جلنے میں کچھ سنا بھی ہے

    تم اس قدر جو نڈر ہو کے ظلم کرتے ہو

    بتاں ہمارا تمہارا کوئی خدا بھی ہے

    تو قاتلوں سے لگاتا ہے دل کو کیوں تاباںؔ

    کہ ان کے ہاتھ سے جیتا کوئی بچا بھی ہے

    مأخذ :
    • Deewan-e-Taban Rekhta Website)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY