کسی کی بے رخی کا غم نہیں ہے

ماہر القادری

کسی کی بے رخی کا غم نہیں ہے

ماہر القادری

MORE BYماہر القادری

    کسی کی بے رخی کا غم نہیں ہے

    کہ اتنا ربط بھی اب کم نہیں ہے

    نہ ہوشیاری نہ غفلت اور نہ مستی

    ہمارا اب کوئی عالم نہیں ہے

    رگ جاں سے بھی وہ نزدیک تر ہیں

    مگر یہ فاصلہ بھی کم نہیں ہے

    یہاں کیا ذکر شرم و آبرو کا

    یہ دور عظمت مریم نہیں ہے

    فغاں اک مشغلہ ہے عاشقوں کا

    یہ عادت بر بنائے غم نہیں ہے

    فرشتوں کی یہ شان بے گناہی

    جواب لغزش آدم نہیں ہے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    کسی کی بے رخی کا غم نہیں ہے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY