کوئی ہمدم بنا کے دیکھو تم

اثر اکبرآبادی

کوئی ہمدم بنا کے دیکھو تم

اثر اکبرآبادی

MORE BYاثر اکبرآبادی

    کوئی ہمدم بنا کے دیکھو تم

    دل کی دنیا بسا کے دیکھو تم

    صبح نو پھر سے جاگ جائے گی

    شام غم کو سلا کے دیکھو تم

    بن ہی جائے گا وہ گہر اک دن

    کوئی پتھر اٹھا کے دیکھو تم

    ڈوب جاؤ گے میری چاہت میں

    مجھ سے نظریں ملا کے دیکھو تم

    مسکرانا ادا سہی پھر بھی

    لذت غم اٹھا کے دیکھو تم

    راہ الفت میں ہارنا کیسا

    اک دیا اور جلا کے دیکھو تم

    حسن پر ناز ہے بجا لیکن

    عشق کو آزما کے دیکھو تم

    غیر ہی سے اثرؔ توقع کیوں

    خود کو اپنا بنا کے دیکھو تم

    مأخذ :
    • کتاب : Uran Kate Paron ki (Pg. 100)
    • Author : Asar Akbarabadi
    • مطبع : Asar Akbarabadi, Canada (2012)
    • اشاعت : 2012

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے