کچھ غم جاناں کچھ غم دوراں دونوں میری ذات کے نام

ملک زادہ منظور احمد

کچھ غم جاناں کچھ غم دوراں دونوں میری ذات کے نام

ملک زادہ منظور احمد

MORE BYملک زادہ منظور احمد

    کچھ غم جاناں کچھ غم دوراں دونوں میری ذات کے نام

    ایک غزل منسوب ہے اس سے ایک غزل حالات کے نام

    موج بلا دیوار شہر پہ اب تک جو کچھ لکھتی رہی

    میری کتاب زیست کو پڑھیے درج ہیں سب صدمات کے نام

    گرتے خیمے جلتی طنابیں آگ کا دریا خون کی نہر

    ایسے منظم منصوبوں کو دوں کیسے آفات کے نام

    اس کی گلی سے مقتل جاں تک مسجد سے مے خانے تک

    الجھن پیاس خلش تنہائی کرب زدہ لمحات کے نام

    صحرا زنداں طوق سلاسل آتش زہر اور دار و رسن

    کیا کیا ہم نے دے رکھے ہیں آپ کے احسانات کے نام

    روشن چہرہ بھیگی زلفیں دوں کس کو کس پر ترجیح

    ایک قصیدہ دھوپ کا لکھوں ایک غزل برسات کے نام

    جن کے لیے مر مر کے جئے ہم کیا پایا ان سے منظورؔ

    کچھ رسوائی کچھ بدنامی ہم کو ملی سوغات کے نام

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ملک زادہ منظور احمد

    ملک زادہ منظور احمد

    RECITATIONS

    ملک زادہ منظور احمد

    ملک زادہ منظور احمد

    ملک زادہ منظور احمد

    کچھ غم جاناں کچھ غم دوراں دونوں میری ذات کے نام ملک زادہ منظور احمد

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY