کچھ مجھے کہہ کے نہ کہوائیے آپ

قربان علی سالک بیگ

کچھ مجھے کہہ کے نہ کہوائیے آپ

قربان علی سالک بیگ

MORE BYقربان علی سالک بیگ

    کچھ مجھے کہہ کے نہ کہوائیے آپ

    بس زباں میری نہ کھلوایئے آپ

    دوش پر اور نہ بھاری ہو جائے

    میرے سر کی نہ قسم کھائیے آپ

    بزم ناز اس کی ہے اے حضرت دل

    پاؤں اپنے بھی نہ پھیلائیے آپ

    غیر کے شکوے نہ پوچھو شب وصل

    پچھلے مردے نہ اکھڑوائیے آپ

    لوگ جانیں گے تمہارا عاشق

    میں اگر آؤں تو شرمائیے آپ

    کچھ پتا میرا بتا دیجئے گا

    کچھ خبر میری اگر پائیے آپ

    ساتھ میرے نہ کوئی چیخ اٹھے

    مجھ کو محفل سے نہ اٹھوائیے آپ

    جاتے جاتے کہیں اغیار کے گھر

    کاش رستے ہی میں مل جائیے آپ

    ایک دم اس کو بھلا کر سالکؔ

    جی کسی طرح تو بہلائیے آپ

    مآخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY