کیا گلہ اس کا جو میرا دل گیا

بیدم شاہ وارثی

کیا گلہ اس کا جو میرا دل گیا

بیدم شاہ وارثی

MORE BYبیدم شاہ وارثی

    کیا گلہ اس کا جو میرا دل گیا

    مل گئے تم مجھ کو سب کچھ مل گیا

    جس کو آنکھیں ڈھونڈھتی تھیں پا گئیں

    دل کو جس کی جستجو تھی مل گیا

    اس گل رعنا نے ہنس کر بات کی

    غنچۂ خاطر ہمارا کھل گیا

    چھوڑ کر تو اس کو غیروں سے ملا

    خاک میں جو تیری خاطر مل گیا

    بن گئی ہر موج اک موج سراب

    تشنہ لب جب میں لب ساحل گیا

    عرض حال چاک دل کیوں کر کروں

    سامنے ان کے گیا منہ سل گیا

    غیر ہی کیا بے رخی سے آپ کی

    آج بیدمؔ بھی بہت بیدل گیا

    مأخذ :
    • کتاب : jigar parah armagaan bedam shaah (Pg. 32)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے