کیا وصل کے اقرار پہ مجھ کو ہو خوشی آج

نوح ناروی

کیا وصل کے اقرار پہ مجھ کو ہو خوشی آج

نوح ناروی

MORE BY نوح ناروی

    کیا وصل کے اقرار پہ مجھ کو ہو خوشی آج

    اس کی بھی یہ صورت ہے کبھی کل ہے کبھی آج

    وہ ہاتھ میں تلوار لئے سر پہ کھڑے ہیں

    مرنے نہیں دیتی مجھے مرنے کی خوشی آج

    ملنا جو نہ ہو تم کو تو کہہ دو نہ ملیں گے

    یہ کیا کبھی پرسوں ہے کبھی کل ہے کبھی آج

    کیا بات ہے چھپتی ہی نہیں بات ہماری

    جو ان سے کہی تھی وہ رقیبوں سے سنی آج

    سرخی بھی ہے آنکھوں میں قدم کو بھی ہے لغزش

    چھپ کر کہیں اے نوحؔ ضرور اپنے پی آج

    مآخذ:

    • Book : Intekhab-e-Sukhan(Jild-2) (Pg. 140)
    • Author : Hasrat Mohani
    • مطبع : uttar pradesh urdu academy (1983)
    • اشاعت : 1983

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY