لمحہ وہ تیری یاد کا ایسے گزر گیا

چندر واحد

لمحہ وہ تیری یاد کا ایسے گزر گیا

چندر واحد

MORE BYچندر واحد

    لمحہ وہ تیری یاد کا ایسے گزر گیا

    جیسے کہ پھول شاخ سے ٹوٹا بکھر گیا

    کل چھانو مل سکے گی سبھی کو یہ سوچ کر

    جس نے لگائے پیڑ وہ بوڑھا کدھر گیا

    جو پتھروں کے بدلے میں دیتا تھا پھل مجھے

    دور خزاں بتا تو کہاں وہ شجر گیا

    قائم ہے دل میں آج بھی اڑنے کا حوصلہ

    صیاد وقت لاکھ مرے پر کتر گیا

    دھڑکن سنائی دیتی تھی ہر ایک لفظ میں

    کیا جانے شاعری سے کہاں وہ ہنر گیا

    مأخذ :
    • کتاب : سمے کمہار ہے
    • Author : چندر واحد
    • مطبع : اے۔1؍بشچمی گورکھ پارک شاہدرہ دہلی۔32 (2001)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY