میں وہ نہیں کہ زمانے سے بے عمل جاؤں

ابراہیم ہوش

میں وہ نہیں کہ زمانے سے بے عمل جاؤں

ابراہیم ہوش

MORE BYابراہیم ہوش

    میں وہ نہیں کہ زمانے سے بے عمل جاؤں

    مزاج پوچھ کے دار و رسن کا ٹل جاؤں

    وہ اور ہوں گے جو ہیں آج قید بے سمتی

    وہی ہے سمت میں جس سمت کو نکل جاؤں

    فریب کھا کے جنوں عقل کے کھلونوں سے

    خدا وہ وقت نہ لائے کہ میں بہل جاؤں

    مرا وجود ہے مومی کہیں نہ ہو ایسا

    کسی کی یاد کی گرمی سے میں پگھل جاؤں

    جو چاہتا ہے کہ پستی میں گرتے گرتے بچوں

    نظر کا اپنی عصا دے کہ میں سنبھل جاؤں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY