میں زندہ ہوں یہ مشتہر کیجیے

ساحر لدھیانوی

میں زندہ ہوں یہ مشتہر کیجیے

ساحر لدھیانوی

MORE BYساحر لدھیانوی

    میں زندہ ہوں یہ مشتہر کیجیے

    مرے قاتلوں کو خبر کیجیے

    زمیں سخت ہے آسماں دور ہے

    بسر ہو سکے تو بسر کیجیے

    ستم کے بہت سے ہیں رد عمل

    ضروری نہیں چشم تر کیجیے

    وہی ظلم بار دگر ہے تو پھر

    وہی جرم بار دگر کیجیے

    قفس توڑنا بعد کی بات ہے

    ابھی خواہش بال و پر کیجیے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    میں زندہ ہوں یہ مشتہر کیجیے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY