میں زندگی کا نقشہ ترتیب دے رہا ہوں

ظفر حمیدی

میں زندگی کا نقشہ ترتیب دے رہا ہوں

ظفر حمیدی

MORE BYظفر حمیدی

    میں زندگی کا نقشہ ترتیب دے رہا ہوں

    پھر اک جدید خاکہ ترتیب دے رہا ہوں

    ہر ساز کا ترنم یکسانیت نما ہے

    اک تازہ کار نغمہ ترتیب دے رہا ہوں

    جس میں تری تجلی خود آ کے جا گزیں ہو

    دل میں اک ایسا گوشہ ترتیب دے رہا ہوں

    لمحوں کے سلسلے میں جیتا رہا ہوں لیکن

    میں اپنا خاص لمحہ ترتیب دے رہا ہوں

    کتنے عجیب قصے لکھے گئے ابھی تک

    میں بھی انوکھا قصہ ترتیب دے رہا ہوں

    ذروں کا ہے یہ طوفاں بے چہرگی بداماں

    ذروں سے ایک چہرہ ترتیب دے رہا ہوں

    دنیا کے سارے رشتے بے معنی لگ رہے ہیں

    خالق سے اپنا رشتہ ترتیب دے رہا ہوں

    پر پیچ راستوں پر چلتا ہوا ظفرؔ میں

    سیدھا سا ایک رستہ ترتیب دے رہا ہوں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    میں زندگی کا نقشہ ترتیب دے رہا ہوں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY