مشینیں کام اپنا کر رہی ہیں

عبید حارث

مشینیں کام اپنا کر رہی ہیں

عبید حارث

MORE BYعبید حارث

    مشینیں کام اپنا کر رہی ہیں

    ہمیں بھی اپنے جیسا کر رہی ہیں

    ہزاروں میل سے آتی ہوائیں

    یہاں کہرام برپا کر رہی ہیں

    نئی بیساکھیاں عکس و صدا کی

    ہمارے قد کو اونچا کر رہی ہیں

    سبھی کو اونگھ سی آنے لگی ہے

    فضائیں جادو ٹونا کر رہی ہیں

    ہمارا دل تو ہنگاموں بھرا تھا

    یہاں تنہائیاں کیا کر رہی ہیں

    یہ ظالم ہنسنے والی ہستیاں ہیں

    فقط رومال گیلا کر رہی ہیں

    مأخذ :
    • کتاب : Atraaf (Pg. 79)
    • Author : Obaid Haris
    • مطبع : National Human For Needful Foundation, Nagpur (2015)
    • اشاعت : 2015

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے