مطلب نہ کعبہ سے نہ ارادہ کنشت کا

مرزارضا برق ؔ

مطلب نہ کعبہ سے نہ ارادہ کنشت کا

مرزارضا برق ؔ

MORE BYمرزارضا برق ؔ

    مطلب نہ کعبہ سے نہ ارادہ کنشت کا

    پابند یہ فقیر نہیں سنگ و خشت کا

    سر سبز ہوں جو آپ دکھا دیجے خط سبز

    کشتوں کو کھیت میں ابھی عالم ہو کشت کا

    اس حور کی جو گلشن عارض کی یاد تھی

    دیکھا کیا فراق میں عالم بہشت کا

    کیا منشی ازل کی یہ صنعت ہے دیکھنا

    ماہر نہیں کسی کی کوئی سر نوشت کا

    نادان اعتراض ہے صانع پہ غور کر

    بے جا ہے امتیاز یہاں خوب و زشت کا

    اے برقؔ سیر کرتے ہیں ہم تو جہان کی

    ہر کوچۂ صنم ہے نمونہ بہشت کا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے