مزے جہان کے اپنی نظر میں خاک نہیں

مرزا غالب

مزے جہان کے اپنی نظر میں خاک نہیں

مرزا غالب

MORE BYمرزا غالب

    مزے جہان کے اپنی نظر میں خاک نہیں

    سواے خون جگر سو جگر میں خاک نہیں

    مگر غبار ہوے پر ہوا اڑا لے جاے

    وگرنہ تاب و تواں بال و پر میں خاک نہیں

    یہ کس بہشت شمائل کی آمد آمد ہے

    کہ غیر جلوۂ گل رہ گزر میں خاک نہیں

    بھلا اسے نہ سہی کچھ مجھی کو رحم آتا

    اثر مرے نفس بے اثر میں خاک نہیں

    خیال جلوۂ گل سے خراب ہیں میکش

    شراب خانہ کے دیوار و در میں خاک نہیں

    ہوا ہوں عشق کی غارتگری سے شرمندہ

    سواے حسرت تعمیر گھر میں خاک نہیں

    ہمارے شعر ہیں اب صرف دل لگی کے اسدؔ

    کھلا کہ فائدہ عرض ہنر میں خاک نہیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    امانت علی خان

    امانت علی خان

    ذوالفقار علی بخاری

    ذوالفقار علی بخاری

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    مزے جہان کے اپنی نظر میں خاک نہیں نعمان شوق

    مأخذ :
    • کتاب : Deewan-e-Ghalib Jadeed (Al-Maroof Ba Nuskha-e-Hameedia) (Pg. 286)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY