رہی نہ پختگی عالم میں دور خامی ہے

میر تقی میر

رہی نہ پختگی عالم میں دور خامی ہے

میر تقی میر

MORE BY میر تقی میر

    رہی نہ پختگی عالم میں دور خامی ہے

    ہزار حیف کمینوں کا چرخ حامی ہے

    نہ اٹھ تو گھر سے اگر چاہتا ہے ہوں مشہور

    نگیں جو بیٹھا ہے گڑ کر تو کیسا نامی ہے

    ہوئی ہیں فکریں پریشان میرؔ یاروں کی

    حواس خمسہ کرے جمع سو نظامیؔ ہے

    مآخذ:

    • Book: MIRIYAAT - Diwan No- 1, Ghazal No- 0580
    • Book: मीरियात - दीवान नंo- 1, ग़ज़ल नंo- 0580
    • Book: MIRIYAAT - Diwan No- 1, Ghazal No- 0580

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY