نہ تو زمیں کے لئے ہے نہ آسماں کے لیے

ساحر لدھیانوی

نہ تو زمیں کے لئے ہے نہ آسماں کے لیے

ساحر لدھیانوی

MORE BYساحر لدھیانوی

    نہ تو زمیں کے لئے ہے نہ آسماں کے لیے

    ترا وجود ہے اب صرف داستاں کے لیے

    پلٹ کے سوئے چمن دیکھنے سے کیا ہوگا

    وہ شاخ ہی نہ رہی جو تھی آشیاں کے لیے

    غرض پرست جہاں میں وفا تلاش نہ کر

    یہ شے بنی تھی کسی دوسرے جہاں کے لیے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    محمد رفیع

    محمد رفیع

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Sahir Ludhianvi (Pg. 440)
    • Author : SAHIR LUDHIANVI
    • مطبع : Farid Book Depot (Pvt.) Ltd

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY