پھڑپھڑاتا ہوا پرندہ ہے

احمد سجاد بابر

پھڑپھڑاتا ہوا پرندہ ہے

احمد سجاد بابر

MORE BYاحمد سجاد بابر

    پھڑپھڑاتا ہوا پرندہ ہے

    مان لو کہ دعا پرندہ ہے

    اس کڑی دھوپ میں مرے ہم راہ

    ریت آنسو ہوا پرندہ ہے

    خواہشوں کا سفر نہیں رکتا

    یہ عجب بھاگتا پرندہ ہے

    جھیل سوکھی تو وہ پلٹ آیا

    دل کے ہاتھوں مڑا پرندہ ہے

    موت اس کو کہو بجا لیکن

    اصل میں تو اڑا پرندہ ہے

    آنے والی بہار ہے بابرؔ

    میری چھت پر رکا پرندہ ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY