پھر بہار آئی مرے صیاد کو پروا نہیں

رنگیں سعادت یار خاں

پھر بہار آئی مرے صیاد کو پروا نہیں

رنگیں سعادت یار خاں

MORE BYرنگیں سعادت یار خاں

    پھر بہار آئی مرے صیاد کو پروا نہیں

    اڑ کے میں پہنچوں چمن میں کیا کروں پر وا نہیں

    جی جلا کر ایک بوسہ مانگتے ہیں بار سے

    آگے یا قسمت وہ دیکھیں ہاں کرے ہے یا نہیں

    حسرت و حرمان و یاس و حیرت رنج و تعب

    کیا کہوں اس ہجر میں کیا کیا ہے اور کیا کیا نہیں

    ہر کسی سے لگ چلے کیا ذکر ہے امکان کیا

    ہم اسے پہچانتے ہیں خوب وہ ایسا نہیں

    چار عنصر کی غزل رنگیںؔ کہو تم دوسری

    ہے قسم تم کو علی جی کی یہ مت کہنا نہیں

    مأخذ :
    • کتاب : intekhaab-e-sukhan(avval) (Pg. 71)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY