پھول پتوں کا سلسلہ ہوگا

دیپک قمر

پھول پتوں کا سلسلہ ہوگا

دیپک قمر

MORE BYدیپک قمر

    پھول پتوں کا سلسلہ ہوگا

    گھر ہمارا ہرا بھرا ہوگا

    جانے ور ہے کہ شاب ہے کوئی

    سب میں رہ کے بھی وہ جدا ہوگا

    بوجھ لگتا ہے دل پہ پربت سا

    دیکھ کر بھی وہ چپ رہا ہوگا

    اب ارادوں کی باگ کو کھولیں

    قافلہ تو گزر گیا ہوگا

    چاند سورج کو چھوڑ کر اک دن

    اپنے ہاتھوں میں اک دیا ہوگا

    جو لگائے گا سوچ پر بندھن

    بات بے بات بھی خفا ہوگا

    تیری کھڑکی میں جو چہکتا ہے

    وہ پکھیرو کبھی ہوا ہوگا

    مآخذ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY