بچے لائے انوکھی تتلی اور نرالے پھول

مظفر حنفی

بچے لائے انوکھی تتلی اور نرالے پھول

مظفر حنفی

MORE BYمظفر حنفی

    بچے لائے انوکھی تتلی اور نرالے پھول

    خوشبو دینے والی تتلی اڑنے والے پھول

    جس دن گلشن میں نفرت کی آندھی چلتی ہے

    شاخوں پر اگنے لگتے ہیں کالے کالے پھول

    اس کے پیروں میں کانٹے تھے چھالے ہاتھوں میں

    اوپر سے پریوں نے اس بچے پر ڈالے پھول

    ہمرا اور ثمرہ نے سالگرہ پر ایمن کی

    خوب چھڑائی آتش بازی خوب اچھالے پھول

    میری گود میں پوتی ہے تو پوتا کندھے پر

    جیسے جھلمل جھلمل جگنو بھولے بھالے پھول

    لفظوں کے اس جادوگر کے پیارے پیارے شعر

    انگارے دامن میں رکھے اور نکالے پھول

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY