پر نور جس کے حسن سے مدفن تھا کون تھا

آغا حجو شرف

پر نور جس کے حسن سے مدفن تھا کون تھا

آغا حجو شرف

MORE BYآغا حجو شرف

    پر نور جس کے حسن سے مدفن تھا کون تھا

    چہرہ یہ کس شہید کا روشن تھا کون تھا

    ٹھہرا گیا ہے لا کے جو منزل میں عشق کی

    کیا جانے رہنما تھا کہ رہزن تھا کون تھا

    توڑا تھا کس کے دل کو کھلونے کی طرح سے

    عاشق تمہارا جب کہ لڑکپن تھا کون تھا

    کس دل سے ہے خدائی میں ایجاد درد عشق

    روز ازل جو موجد شیون تھا کون تھا

    ہو کا مقام تھا مجھے روتی تھی بے کسی

    کوئی نہ تھا جہاں مرا مدفن تھا کون تھا

    جھک جھک کے دیکھتا تھا وہ کس کی جگر کا گھاؤ

    تر جس کے خوں میں یار کا دامن تھا کون تھا

    ہم مسکراتے تھے وہ دکھاتا تھا سیر باغ

    دم کس پہ شیفتہ دم مردن تھا کون تھا

    انسان تھا کہ کوئی پری زاد تھا شرفؔ

    دل میرا جس کے نور سے روشن تھا کون تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے