قلم ہو تیغ ہو تیشہ کہ ڈھال مت چھنیو

وصی شاہ

قلم ہو تیغ ہو تیشہ کہ ڈھال مت چھنیو

وصی شاہ

MORE BYوصی شاہ

    قلم ہو تیغ ہو تیشہ کہ ڈھال مت چھنیو

    کبھی کسی سے کسی کا کمال مت چھنیو

    خوشی اسی میں اگر ہے تو ہر خوشی لے لو

    یہ دکھ یہ درد یہ حزن و ملال مت چھنیو

    اسی خلش کے سبب پھر مجھے ابھرنا ہے

    خدا کے واسطے عہد زوال مت چھنیو

    میں چھوڑ سکتا نہیں ساتھ استقامت کا

    مری اذان سے جوش بلال مت چھنیو

    ابھی کتاب نہ چھنیو تم ان کے ہاتھوں سے

    ہمارے بچوں کا حسن و جمال مت چھنیو

    ہماری آنکھ میں یادوں کے زخم رہنے دو

    ہمارے ہاتھ سے پھولوں کی ڈال مت چھنیو

    ابھی بجھاؤ نہ کینڈل نہ کیک کاٹو ابھی

    کچھ اور دیر مرا پچھلا سال مت چھنیو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے