قیامت کی تڑپ غم انتہا کا

اکرام اللہ خان اظہر

قیامت کی تڑپ غم انتہا کا

اکرام اللہ خان اظہر

MORE BYاکرام اللہ خان اظہر

    قیامت کی تڑپ غم انتہا کا

    صلہ ہم کو ملا ہے یہ وفا کا

    بھرم ٹوٹا نہیں میری انا کا

    ابھی تک فضل ہے اظہر خدا کا

    ہمیں پھر خوف کیا روز جزا کا

    وسیلہ ہے محمد مصطفیٰ کا

    سنبھل کر کیجئے گا گفتگو بھی

    مخالف آج کل ہے رخ ہوا کا

    مزہ آنے لگا ہے درد دل میں

    اثر شاید ہے یہ میری دعا کا

    کوئی خائف نہ اس کو کر سکے گا

    جو دامن تھام لے مشکل کشا کا

    جہاں سچ بولنا ہے جرم اظہرؔ

    وہاں کیا کام ہے اہل صفا کا

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY