ساقی ہو اور چمن ہو مینا ہو اور ہم ہوں

تاباں عبد الحی

ساقی ہو اور چمن ہو مینا ہو اور ہم ہوں

تاباں عبد الحی

MORE BYتاباں عبد الحی

    ساقی ہو اور چمن ہو مینا ہو اور ہم ہوں

    باراں ہو اور ہوا ہو سبزہ ہو اور ہم ہوں

    زاہد ہو اور تقویٰ عابد ہو اور مصلیٰ

    مالا ہو اور برہمن صہبا ہو اور ہم ہوں

    مجنوں ہیں ہم ہمیں تو اس شہر سے ہے وحشت

    شہری ہوں اور بستی صحرا ہو اور ہم ہوں

    یارب کوئی مخالف ہووے نہ گرد میرے

    خلوت ہو اور شب ہو پیارا ہو اور ہم ہوں

    دیوانگی کا ہم کو کیا حظ ہو ہر طرف گر

    لڑکے ہوں اور پتھرتے بلوا ہو اور ہم ہوں

    اوروں کو عیش و عشرت اے چرخ بے مروت

    غصہ ہو اور غم ہو رونا ہو اور ہم ہوں

    ایمان و دیں سے تاباںؔ کچھ کام نہیں ہے ہم کو

    ساقی ہو اور مے ہو دنیا ہو اور ہم ہوں

    مأخذ :
    • Deewan-e-Taban Rekhta Website)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY