شبنم ہے کہ دھوکا ہے کہ جھرنا ہے کہ تم ہو

احمد سلمان

شبنم ہے کہ دھوکا ہے کہ جھرنا ہے کہ تم ہو

احمد سلمان

MORE BYاحمد سلمان

    شبنم ہے کہ دھوکا ہے کہ جھرنا ہے کہ تم ہو

    دل دشت میں اک پیاس تماشہ ہے کہ تم ہو

    اک لفظ میں بھٹکا ہوا شاعر ہے کہ میں ہوں

    اک غیب سے آیا ہوا مصرع ہے کہ تم ہو

    دروازہ بھی جیسے مری دھڑکن سے جڑا ہے

    دستک ہی بتاتی ہے پرایا ہے کہ تم ہو

    اک دھوپ سے الجھا ہوا سایہ ہے کہ میں ہوں

    اک شام کے ہونے کا بھروسہ ہے کہ تم ہو

    میں ہوں بھی تو لگتا ہے کہ جیسے میں نہیں ہوں

    تم ہو بھی نہیں اور یہ لگتا ہے کہ تم ہو

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    احمد سلمان

    احمد سلمان

    RECITATIONS

    احمد سلمان

    احمد سلمان

    احمد سلمان

    شبنم ہے کہ دھوکا ہے کہ جھرنا ہے کہ تم ہو احمد سلمان

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY