سسکتے بام و در روتا ہوا گھر چھوڑ آیا ہوں

بھارت بھوشن پنت

سسکتے بام و در روتا ہوا گھر چھوڑ آیا ہوں

بھارت بھوشن پنت

MORE BY بھارت بھوشن پنت

    سسکتے بام و در روتا ہوا گھر چھوڑ آیا ہوں

    میں خود کو ایک ویرانے میں جا کر چھوڑ آیا ہوں

    جہاں احساس کی آواز بھی آتی نہیں مجھ تک

    میں ایسی بے حسی میں خود کو اکثر چھوڑ آیا ہوں

    اکیلا میں ہی کیوں اب یہ سکوت موج بھی ٹوٹے

    تھرکتی جھیل کی آنکھوں میں کنکر چھوڑ آیا ہوں

    بہت عجلت میں اپنے زخم میں نے سی لیے لیکن

    کہیں میں جسم کے اندر ہی نشتر چھوڑ آیا ہوں

    جو اک تصویر تھی دل میں وہ مجھ سے بن نہ پائی تو

    میں ایک کاغذ پہ سارے رنگ بھر کر چھوڑ آیا ہوں

    مآخذ:

    • Book: Khuvabon Ka Karvan

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites