تقدیر کی گردش کیا کم تھی اس پر یہ قیامت کر بیٹھے

شکیل بدایونی

تقدیر کی گردش کیا کم تھی اس پر یہ قیامت کر بیٹھے

شکیل بدایونی

MORE BY شکیل بدایونی

    تقدیر کی گردش کیا کم تھی اس پر یہ قیامت کر بیٹھے

    بے تابئ دل جب حد سے بڑھی گھبرا کے محبت کر بیٹھے

    آنکھوں میں چھلکتے ہیں آنسو دل چپکے چپکے روتا ہے

    وہ بات ہمارے بس کی نہ تھی جس بات کی ہمت کر بیٹھے

    غم ہم نے خوشی سے مول لیا اس پر بھی ہوئی یہ نادانی

    جب دل کی امیدیں ٹوٹ گئیں قسمت سے شکایت کر بیٹھے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    لتا منگیشکر

    لتا منگیشکر

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    تقدیر کی گردش کیا کم تھی اس پر یہ قیامت کر بیٹھے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY