تیری ہر بات محبت میں گوارا کر کے

راحت اندوری

تیری ہر بات محبت میں گوارا کر کے

راحت اندوری

MORE BYراحت اندوری

    تیری ہر بات محبت میں گوارا کر کے

    دل کے بازار میں بیٹھے ہیں خسارہ کر کے

    آتے جاتے ہیں کئی رنگ مرے چہرے پر

    لوگ لیتے ہیں مزا ذکر تمہارا کر کے

    ایک چنگاری نظر آئی تھی بستی میں اسے

    وہ الگ ہٹ گیا آندھی کو اشارہ کر کے

    آسمانوں کی طرف پھینک دیا ہے میں نے

    چند مٹی کے چراغوں کو ستارہ کر کے

    میں وہ دریا ہوں کہ ہر بوند بھنور ہے جس کی

    تم نے اچھا ہی کیا مجھ سے کنارہ کر کے

    منتظر ہوں کہ ستاروں کی ذرا آنکھ لگے

    چاند کو چھت پر بلا لوں گا اشارہ کر کے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    راحت اندوری

    راحت اندوری

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY