تمہارے آنے کا جب جب بھی اہتمام کیا

سید مبین علوی خیرآبادی

تمہارے آنے کا جب جب بھی اہتمام کیا

سید مبین علوی خیرآبادی

MORE BYسید مبین علوی خیرآبادی

    تمہارے آنے کا جب جب بھی اہتمام کیا

    تو حسرتوں نے ادب سے مجھے سلام کیا

    کہاں کہاں نہ نظر نے تمہاری کام کیا

    اتر کے دل میں امیدوں کا قتل عام کیا

    غموں کے دور میں ہنس کر جو پی گئے آنسو

    تو آنے والی مسرت نے احترام کیا

    یہ کس نے چن کے مسرت کے پھول دامن سے

    غموں کا بوجھ مری زندگی کے نام کیا

    مبینؔ گلشن ہستی میں آگ بھڑکی ہے

    جنون شوق نے کیا خوب اپنا کام کیا

    مآخذ:

    • کتاب : Pirahn-e-harf (Pg. 67)
    • Author : Mubeen Alvi Khairabadi
    • مطبع : Mubeen Alvi Khairabadi (1999)
    • اشاعت : 1999

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY