Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

اڑتے ہوئے پرندوں کے شہ پر سمیٹ لوں

مرغوب علی

اڑتے ہوئے پرندوں کے شہ پر سمیٹ لوں

مرغوب علی

MORE BYمرغوب علی

    اڑتے ہوئے پرندوں کے شہ پر سمیٹ لوں

    جی چاہتا ہے شام کے منظر سمیٹ لوں

    لب پر اگاؤں اس کے دھنک پھول قہقہے

    آنکھوں میں اس کی پھیلا سمندر سمیٹ لوں

    پہلے ملن کا پھول کھلے روح میں تری

    باہوں میں تجھ کو لے کے ترے ڈر سمیٹ لوں

    ممکن نہیں ہے پھر بھی میں یہ چاہتا ہوں کیوں

    اخبار پر سلگتے ہوئے گھر سمیٹ لوں

    چادر دوں اپنے عہد کی زینب کو اور بڑھوں

    نیزوں پہ جو سجے ہیں سبھی سر سمیٹ لوں

    مأخذ :
    • کتاب : Aadhi Raat Ki Shabnam (Pg. 72)
    • Author : Marghoob Ali
    • مطبع : Takhleeqkar Publishers (2001)
    • اشاعت : 2001

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے