الجھا اس کی دید میں

حسن شاہنواز زیدی

الجھا اس کی دید میں

حسن شاہنواز زیدی

MORE BYحسن شاہنواز زیدی

    الجھا اس کی دید میں

    پڑا رہا تمہید میں

    بھول گیا اس بار بھی

    اثر نہیں تاکید میں

    سیکھا من کو مارنا

    افسر کی تائید میں

    رہنا پل پل دھیان میں

    ملنا عید کے عید میں

    نامہ بر لکھوائے گا

    تجھ سے نام رسید میں

    اس کی شکل اتار لوں

    گر آ جائے کشید میں

    کانچ تراشوں بیٹھ کر

    ہیرے کی تقلید میں

    ڈھونڈ خدا انسان سے

    مرشد دیکھ مرید میں

    صفر انا کو مان کر

    مٹ جاؤ توحید میں

    مجھے مصور مل گیا

    چھپا ہوا تجرید میں

    ڈھالا ایک جنون نے

    قطرہ مروارید میں

    کچھ بے ہمت دھرتیاں

    جڑی رہیں خورشید میں

    کیوں آتا ہے لوٹ کر

    وہی قدیم جدید میں

    واحد کو اصرار ہے

    کیوں اتنا توحید میں

    مآخذ:

    • کتاب : Tamasha (Pg. 71)
    • Author : Hassan Shahnawaz Zaidi
    • اشاعت : 2014

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY