یہ جو ترتیب سے بنا ہوا میں

الیاس بابر اعوان

یہ جو ترتیب سے بنا ہوا میں

الیاس بابر اعوان

MORE BYالیاس بابر اعوان

    یہ جو ترتیب سے بنا ہوا میں

    ایک مدت میں راستہ ہوا میں

    لوگ آتے تھے دیکھنے مجھ کو

    ایسے پتھر سے آئینہ ہوا میں

    کیا خبر کب نظر میں آ جاؤں

    شور میں ایک بولتا ہوا میں

    اب تو پہچان میں نہیں آتا

    تیری دیوار سے جڑا ہوا میں

    شہر کے بیچ آ گیا اک دن

    صحن کے بیچ دوڑتا ہوا میں

    آپ بھی اپنا شوق فرمائیں

    جانے کتنوں کا ہوں ڈسا ہوا میں

    شام ہوتی ہے تو نکلتا ہوں

    اس کی پلکوں سے چیختا ہوا میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے