یوں تہ شبنم چمن رکھنا بھی کیا

عبدالسلام عاصم

یوں تہ شبنم چمن رکھنا بھی کیا

عبدالسلام عاصم

MORE BYعبدالسلام عاصم

    یوں تہ شبنم چمن رکھنا بھی کیا

    خواہشوں کو بے سخن رکھنا بھی کیا

    لمس کی تعبیر سے نا آشنا

    خواب کے جیسا بدن رکھنا بھی کیا

    گھر کی دیواریں نہ دیں جس کا پتہ

    ایسی دولت ایسا دھن رکھنا بھی کیا

    بنتے بنتے بھی بگڑ جاتی ہے بات

    اتنی لہجے میں چبھن رکھنا بھی کیا

    زندگی جینے کی ضد اپنی جگہ

    باندھ کر سر سے کفن رکھنا بھی کیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY