یوں ہی ظالم کا رہا راج اگر اب کے برس

رضا مورانوی

یوں ہی ظالم کا رہا راج اگر اب کے برس

رضا مورانوی

MORE BYرضا مورانوی

    یوں ہی ظالم کا رہا راج اگر اب کے برس

    غیرممکن ہے رہے دوش پہ سر اب کے برس

    جسم بوئیں گے ستم گار اناجوں کی جگہ

    اور فصلوں کی طرح کاٹیں گے سر اب کے برس

    ذہن سے کام لو اور موڑ دو طوفان کا رخ

    ورنہ آنسو میں ہی بہہ جائیں گے گھر اب کے برس

    جانے کس وقت اجل آپ کو لینے آ جائے

    ساتھ ہی رکھیے گا سامان سفر اب کے برس

    نخل حسرت کو نہ اشکوں کی نمی دو ورنہ

    اور مہکے گا گل زخم جگر اب کے برس

    اب نہ گھبراؤ کہ مٹنے کو ہے ظالم کا وجود

    خون مظلوم دکھائے گا اثر اب کے برس

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY