ذائقے پیدا طبیعت میں لچک کرتے ہیں

منّان بجنوری

ذائقے پیدا طبیعت میں لچک کرتے ہیں

منّان بجنوری

MORE BYمنّان بجنوری

    ذائقے پیدا طبیعت میں لچک کرتے ہیں

    آ تجھے واقف قند اور نمک کرتے ہیں

    آؤ چلتے ہیں جہاں سازش احباب نہ ہو

    دشمنی کا یہ سفر دوستی تک کرتے ہیں

    وہ جو انسان کے ہی بس میں ہے اس پر انساں

    جانے کس منہ سے شکایات فلک کرتے ہیں

    کھلنے ہی والا ہے بس اندھی عقیدت کا بھرم

    ہم سے کچھ لوگ بہت چھان‌ پھٹک کرتے ہیں

    شرک تو خواب میں بھی ہم سے نہیں ہو سکتا

    ہم تو یارب تری قدرت پہ بھی شک کرتے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے