اپنے دل کا حال یارو ہم کسی سے کیا کہیں

شمشیر بہادر سنگھ

اپنے دل کا حال یارو ہم کسی سے کیا کہیں

شمشیر بہادر سنگھ

MORE BYشمشیر بہادر سنگھ

    اپنے دل کا حال یارو ہم کسی سے کیا کہیں

    کوئی بھی ایسا نہیں ملتا جسے اپنا کہیں

    ہو چکی جب ختم اپنی زندگی کی داستاں

    ان کی فرمائش ہوئی ہے اس کو دوبارہ کہیں

    آج اک خاموش ماتم سا ہمارے دل میں ہے

    خواب کے سے دن ہیں ورنہ ہم اسے جینا کہیں

    یاس دل کو باندھ سر پر جلد سایہ کر جنوں

    دم نہیں اتنا جو تم سے سانس کا دھوکا کہیں

    دیکھ کر کے آخر وقت ان کی محبت کی نظر

    ہم کو یاد آیا وہ کچھ کہنا جسے شکوہ کہیں

    اس کی پر حسرت نگاہیں دیکھ کر رحم آ گیا

    ورنہ جی میں تھا کہ ہم بھی ہنس کے دیوانہ کہیں

    قافلے والو کہاں جاتے ہو صحرا کی طرف

    آؤ بیٹھو تم سے ہم مجنوں کا افسانہ کہیں

    مشک بوئے زلف اس کی گھیر لے جس جا ہمیں

    دل یہ کہتا ہے اسی کو اپنا کاشنا کہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے