شادی سے پہلے

نشتر امروہوی

شادی سے پہلے

نشتر امروہوی

MORE BYنشتر امروہوی

    بیگم تمہاری یاد میں اپنا یہ حال ہے

    گر رات کٹ بھی جائے تو دن کا سوال ہے

    کھا کر یہ حال ہو گیا ہوٹل کی روٹیاں

    جیسے کہ ہڈیوں پہ منڈھی میری کھال ہے

    یوں تو گزر رہی ہے تمہارے بغیر بھی

    لیکن بڑی اداس بڑی خستہ حال ہے

    اپنے پرائے سب تمہیں مل مل کے آ گئے

    بس میں ہی مل نہ پاؤں یہ کیسا کمال ہے

    جی چاہتا ہے توڑوں رواجوں کی بندشیں

    دنیا حرام زادی کا لیکن خیال ہے

    شادی کا ذکر جب کیا اماں کے سامنے

    ہر سال یہ کہا کہ بس اب اگلے سال ہے

    اس دن تمہارا برقعے میں دیدار کیا ہوا

    نظروں میں آج تک وہ ادھورا جمال ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Post Martum (Pg. 124)
    • Author : Nashtar Amrohvi
    • مطبع : M.R. Publications (2012)
    • اشاعت : 2012

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY