عذاب ہجر

قیصر ضیا قیصر

عذاب ہجر

قیصر ضیا قیصر

MORE BYقیصر ضیا قیصر

    یہ تیرے ہجر کی آندھی

    کہاں لے آئی ہے مجھ کو

    یہاں ہر سمت اک سورج

    سوا نیزے پہ جلتا ہے

    نہ سر سے دھوپ اترتی ہے

    نہ سایہ کوئی ڈھلتا ہے

    ہوائے شام چلتی ہے

    نہ کوئی شمع جلتی ہے

    فلک پر نجم آتے ہیں

    نہ تو مہتاب آتا ہے

    کسی کی آنکھ سوتی ہے

    نہ کوئی خواب آتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY