ڈبوں کا دودھ پی کر بچے جو پل رہے ہیں

پاگل عادل آبادی

ڈبوں کا دودھ پی کر بچے جو پل رہے ہیں

پاگل عادل آبادی

MORE BYپاگل عادل آبادی

    ڈبوں کا دودھ پی کر بچے جو پل رہے ہیں

    وہ سب جوان ہو کر بڈھے نکل رہے ہیں

    تھالی کا بن کے بیگن نانا پھسل رہے ہیں

    نانی کی سہیلیوں پہ نیت بدل رہے ہیں

    ان ہپیوں کو شاید یہ بھی خبر نہیں ہے

    زلفوں کے گھونسلوں میں بلبل بھی پل رہے ہیں

    دادا گری میں بابا کچھ کم نہیں تھے لیکن

    بابا سے بڑھ کے چالو بیٹے نکل رہے ہیں

    موضوعات:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY