محبت کا جنم دن

ذیشان ساحل

محبت کا جنم دن

ذیشان ساحل

MORE BY ذیشان ساحل

    آج محبت کا جنم دن ہے

    آج ہم اداسی کی چھری سے

    اپنے دل کو کاٹیں گے

    آج ہم اپنی پلکوں پر

    جلتی ہوئی موم بتی رکھ کے

    ایک تار پر سے گزریں گے

    ہمیں کوئی نہیں دیکھے گا

    مگر ہم ہر بند کھڑکی کی طرف

    دیکھیں گے

    ہر دروازے کے سامنے پھول رکھیں گے

    کسی نہ کسی بات پر

    ہم روئیں گے اور اپنے رونے پر

    ہم ہنسیں گے

    آج محبت کا جنم دن ہے

    آج ہم ہر درخت کے سامنے سے

    گزرتے ہوئے

    ٹوپی اتار کر اسے سلام کریں گے

    ہر بادل کو دیکھ کے

    ہاتھ ہلائیں گے

    ہر ستارے کا شکریہ ادا کریں گے

    ہمارے آنسوؤں نے

    ہمارے ہتھیلیوں کو چھلنی کر دیا ہے

    آج ہم اپنے دونوں ہاتھ

    جیبوں میں ڈال کر چلیں گے

    اور اگلے برس تک چلتے رہیں گے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    محبت کا جنم دن نعمان شوق

    مآخذ:

    • Book: saarii nazmen (Pg. 178)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites