بے التفاتی

حسن نعیم

بے التفاتی

حسن نعیم

MORE BYحسن نعیم

    میں نے ہر غم میں ترا ساتھ دیا ہے اب تک

    تیری ہر تازہ مسرت پہ ہوا ہوں مسرور

    اپنی قسمت کے بدلتے ہوئے دھاروں کے سوا

    تیری قسمت کے بھنور سے بھی ہوا ہوں مجبور

    تیرے سینے کا ہر اک راز بتا سکتا ہوں

    مجھ میں پوشیدہ نہیں کوئی ترا سوز دروں

    فکر مانوس پہ ظاہر ہے ہر اک خواب جمیل

    اور ہر خواب سے ملتا ہے تجھے کتنا سکوں

    آج تک تو نے مگر مجھ سے نہ پوچھا ہے کبھی

    کیوں مرے غم سے ترا چہرہ اتر جاتا ہے؟

    جب مرے دل میں لہکتے ہیں مسرت کے کنول

    کیوں ترا چہرہ مسرت سے نکھر جاتا ہے؟

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    بے التفاتی نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY