برأت

عابد ادیب

برأت

عابد ادیب

MORE BYعابد ادیب

    رگوں میں دوڑتا پھرتا لہو پھر تھم گیا ہے

    ہوائیں تیز ہیں سانسوں کی ہلچل رک گئی ہے

    ریڑھ کی ہڈی میں چیونٹی رینگتی ہے

    جسم میں پورے حرارت بڑھ گئی ہے

    ذائقہ کڑوا کسیلا ہو گیا ہے

    کہ شاید

    پھر کوئی اپنا پرایا ہو گیا ہے

    مآخذ:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY