دیوار سے گفتگو

محبوب خزاں

دیوار سے گفتگو

محبوب خزاں

MORE BYمحبوب خزاں

    کسی ہنستی بولتی جیتی جاگتی چیز پر

    یہ گھمنڈ کیا یہ گمان کیوں

    کہیں اور آپ کی جان کیوں

    یہ تو سلسلے ہیں اسی فریب خیال کے

    غم ذات و خیر و جمال کے

    وہی پھیر اہل سوال کے

    اجی ٹھیک ہے یہ وفا کا زہر نہ گھولیے

    ارے آپ جھوٹ ہی بولئے

    نہیں سب کے بھید نہ کھولیے

    کوئی کیا کرے نہ ملیں جو رنگ ہی رنگ سے

    ڈرو اپنے جی کی امنگ سے

    کٹے کیوں نگاہ پتنگ سے

    کبھی بیکسی کو پکارتے ہیں شجر حجر

    مرے پاس کچھ بھی نہیں مگر

    بڑی زندگی ہے ادھر ادھر

    یہ سنبھلتے ہاتھوں میں کانپتی ہے کمان کیوں

    یہ سرک رہی ہے مچان کیوں

    یہ کھسک رہے ہیں مکان کیوں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    محبوب خزاں

    محبوب خزاں

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY